ہمیں مزاحمت کی ضرورت ہے ہم گرفتار ہونگے یا شہید مگر اپنے آزادی اور مقاصد سے پیچھے نہیں ہٹیں گئے. حسن روحانی

ایران اور امریکا کے درمیان جاری کشیدگی کے تناظر میں تندوتیز بیانات اور بلند بانگ دعووں کا سلسلہ جاری ہے۔جمعرات کو ایرانی صدر حسن روحانی ایک مرتبہ پھر بولے ہیں اور انھوں نے کہا ہے کہ ایران امریکا کے دباؤ کے آگے جھکے گا نہیں۔اگر اس پر بمباری ہوتی تو ہوتی رہے لیکن وہ اپنے مقاصد اور اہداف سے پیچھے نہیں ہٹے گا۔

ایران کی سرکاری خبررساں ایجنسی ایرنا کے مطابق صدر حسن روحانی 1980ء کے عشرے میں ایران اور عراق کے درمیان لڑی گئی جنگ کی یاد میں منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کررہے تھے۔

انھوں نے کہا:’’ ہمیں مزاحمت کی ضرورت ہے تاکہ ہمارے دشمن یہ جان لیں کہ اگر وہ ہماری سرزمین پر بمباری کرتے ہیں اور ہمارے بچے شہید ، زخمی یا گرفتار ہوتے ہیں تو پھر بھی ہم اپنے وطن کی آزادی اور اپنے وقار کے مقاصد سے پیچھے نہیں ہٹیں گے‘‘۔

خبری حوالہ:زرمبش مانیٹرنگ ڈیسک